150

ڈونلڈ ٹرمپ کو ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنا مہنگا پڑگیا، امریکہ کے بڑے اتحادی یورپ کے فیصلے نے امریکہ کوسرپرائز دے دیا

صوفیہ(ویب ڈیسک) ایران پر پابندیوں کے معاملے پر یورپی یونین نے امریکی فیصلے کی مخالفت کردی جس کے بعد روایتی حلیف آمنے سامنے آ کھڑے ہوئے ہیں۔بلغاریہ میں ہونے والے اجلاس میں یورپی یونین کے 28 رکن ممالک کے سربراہان نے ایران سے ہوئے جوہری معاہدے کو برقرار رکھنے پر مکمل اتفاق رائے کیا۔ یورپی کونسل کے چیئرمین ڈونلڈ ٹسک کا کہنا تھا کہ ایٹمی معاہدے کے متعلق امریکہ کے فیصلے کے خلاف یورپی یونین کو ڈٹ جانے کی ضرورت ہے۔ڈونلڈ ٹسک نے یقین دہانی کرائی کہ جب تک ایران ایٹمی معاہدے کی پاسداری کرے گا، یورپی ممالک کے رہنما بھی اس معاہدے سے متعلق اپنے وعدوں پر قائم رہیں گے۔ یورپی کمیشن کی جانب سے 1996 کے قانون کو جلد ہی فعال کیا جائے گا جس کے بعد یورپی کمپنیاں اورعدالتیں امریکی پابندیوں کی تعمیلسے آزاد ہوجائیں گی۔رواں ماہ امریکہ نے تہران سے کیا گیا عالمی جوہری معاہدہ توڑتے ہوئے ایران پر اضافی پابندیاں عائد کیتھیں اور ایران کے ساتھ تجارت کرنے والی کمپنیوں پر بھی پابندی لگانے کی دھمکی دی تھی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں