252

گلوکارہ میشا شفیع کا ایک بار پھر علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام

اسلام آباد (ویب ڈیسک) گلوکارہ، ماڈل اور اداکارہ میشا شفیع نے ایک مرتبہ پھر الزام عائد کیا ہے کہ انہیں صرف گلوگار علی ظفر نے ہراساں کیا۔یاد رہے کہ گلوکارہ میشا شفیع کی جانب سے معروف گلوکار و اداکار علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا گیا تھا جس پر گلوکار نے ان الزامات کو مسترد کرتے ہوئے میشا شفیع کو 100 کروڑ روپے کا لیگل نوٹس بھجوایا تھا جس پر میشا شفیع کی جانب سے بھی قانونی جنگ لڑنے کا اعلان سامنے آیا تھا۔میشا شفیع نے لیگل نوٹس کے جواب میں کہا ہے کہ میرے بیان کے بعد کئی اور خواتین نے بھی علی ظفر پر ان الزامات کو دہرایا ہےعلی ظفر نے کام کے دوران ایک نہیں بلکہ متعدد مرتبہ ہراساں کیا ہے۔ میشا شفیع کے مطابق علی ظفر کے بیانات انکی آواز کو دبانے کی کوشش ہے میشا شفیع نے کہا کہ وہ علی ظفر کے ٹوئیٹس اور الزامات کو مسترد کرتی ہیں، علی ظفر کے بیانات اور مہم کی وجہ سے انکا خاندان متاثر ہوا، میشا شفیع کے مطابق علی ظفر کی مہم جوئی سے دھمکیوں کا سامنا کرنا پڑا، اگر علی ظفر نےاپنا لیگل نوٹس واپس نہ لیا تو وہ سول اور فوجداری قوانین کے تحت کاروائی کریں گی۔حال ہی میں ایک خاتون نے ٹوئٹر پر اپنے طنزیہ پیغام میں گلوکارہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ میشا شفیع کے پورے کیریئر میں انہیں بس علی ظفر نے جنسی طور پر ہراساں کیا، باقی سب لڑکے تو انہیں باجی بہن کہہ کر دور دور سے سلام لیتے ہیں، نہ ذاتی میسجز کرتے ہیں بلکہ نظریں جھکا کر چلتے ہیں۔ میشا شفیع نے مذکورہ خاتون کی جانب سے خود پر تنقیداور تمسخر اڑائے جانے کے جواب میں کہا کہ ہاں صرف علی ظفر نے مجھے ہراساں کیا، لیکن اُس نے صرف مجھے ہی ہراساں نہیں کیا ۔انہوں نے سوال کیا کہ کیا مزید 6 خواتین کا بھی علی ظفر کے خلاف سامنےآنا کافی نہیں؟ ساتھ ہی میشا شفیع نے شکوہ کیا کہ آخر کتنی خواتین سامنے آکر حقیقت بتائیں؟مجھے تعداد بتائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں